رحمن ملک کا بچوں کا جنسی استحصال کرنیوالوں کو سرعام پھانسی دینے کا مطالبہ

PPP

اسلام آباد جدت ویب ڈیسک سابق وزیر داخلہ اور چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے داخلہ سینیٹر رحمٰن ملک نے مطالبہ کیا ہے کہ پاکستان پینل کوڈ میں ترمیم کرکے بچوں کا جنسی استحصال کرنے والوں کو سرعام پھانسی دی جائے اس حوالے سے انہوں نے سینیٹ کو ایک خط لکھاجس میں کہا کہ بچوں سے زیادتی کرنے والوں کو سرعام پھانسی دینے کے ترمیمی بل کو جلد پاس کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ زینب اور عاصمہ کے قاتلوں کو سرعام پھانسی دے کر عبرت کا نشانہ بنایا جائے اور پاکستان پینل کوڈ 364 اے میں فوری طور پر ترمیم کرکے سرعام پھانسی کے الفاظ شامل کیے جائیں۔انہوں نے کہا کہ قائمہ کمیٹی برائے داخلہ بل میں ترمیم کی منظوری پہلے ہی دے چکی ہے اور ساتھ ہی مطالبہ کیا کہ سینیٹ کے رواں اجلاس میں ترمیمی بل منظور کیا جائے۔خیال رہے کہ صوبہ پنجاب کے شہر قصور میں 9 جنوری کو کچرے کے ڈھیر سے ایک 6 سالہ بچی زینب کی لاش ملی تھی، جسے زیادتی کے بعد قتل کیا گیا تھا اس واقعہ نے پورے ملک کو جھنجھوڑ کر رکھ دیا تھاجس کے بعد چیف جسٹس نے بھی از خود نوٹس لیا تھا۔زینب کے قتل کے بعد حکومت کی جانب سے ایک مشترکہ تحقیقاتی کمیٹی بنائی تھی جس نے اس واقعہ میں ملوث ہونے کے شبہ میں سیکڑوں افراد کے ڈی این اے ٹیسٹ کرائے جبکہ ابتدائی طور پر ایک ملزم کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا تھاتاہم بعد ڈی این اے میچ نہ ہونے کے باعث اسے چھوڑ دیا گیا تھا۔بعد ازاں گزشتہ روز پولیس نے زینب قتل کے مرکزی ملزم کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا تھا اور ساتھ ہی اعلان کیا تھا کہ اس کا ڈی این اے بھی میچ ہوگیا ہے جبکہ وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے بھی بعد میں پریس کانفرنس کرکے زینب کے قاتل کو پکڑنے کا اعلان کیا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.