/

سیٹیوں کی بولیاں‘سینیٹ کتنے ارب میں برائے فروخت ‘ جانئے

legislature of Pakistan,

اسلام آباد جدت ویب ڈیسک سینیٹ آف پاکستان کے انتخابات مارچ 2018میںسینٹر بننے کے لئے سیاسی جماعتوں نے 25سے 30کروڑ روپے فی سینیٹر کے لئے شرط عائد کردی ۔ سینٹ کے ذمہ دار ذرائع نے بتایا کہ مختلف سیاسی جماعتوں کی جانب سے 2018کے انتخابات میں سینیٹر بننے کے لئے خطیر رقم مانگی جارہی ہے اسکے لئے بڑی سیاسی جماعتوں نے ابتدائی طور پر سینیٹر بننے کے لئے پارٹی فنڈ کے نام پر 25سے 30کروڑ روپے کی رقم کا تعین کیا ہے۔ یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ چاروں صوبوں کی کھرب پتی شخصیات نے سیاسی جماعتوں کے قائدین سے ملاقاتوں کا سلسلہ شروع کردیا ہے ۔ مارچ 2018کے سینٹ انتخابات میں مجموعی طورپر 52نئے سینیٹر بننے ہیں ۔ذرائع نے بتایا کہ اگر سیاسی جماعتوں کی جانب سے فی سینیٹر کی قیمت 25سے 30کروڑ کے مطالبے پر قائم رہے تو مجموعی طور پر نئے بننے والے 52سینیٹر کو تقریباً 13ارب روپے ادا کرکے ایوان بالا میں پہنچنا ہوگا ۔ پارلیمنٹ کے ایک ذمہ دار سینیٹر نے بتایا کہ گزشتہ سینٹ الیکشن کی طرح اس مرتبہ بھی پارلیمنٹ برائے فروخت کے تحت نئے سینیٹرز کیلئے پارلیمنٹیرین بننے کی حد مقرر کردی گئی ہے جو کہ سیاسی جماعتوں کے کارکنوں اور قائدین کے لئے لمحہ فکریہ کی حیثیت رکھتی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.