پنجاب میں اسموگ کا راج‘ 12افراد جان سے گئے

Punjab 12killed

لاہور جدت ویب ڈیسک پنجاب کے مختلف شہروں میں گزشتہ روز بھی دھند اور اسموگ کا راج برقرار رہا جس کے باعث شہریوں کو سفر میں بھی شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ،مختلف حادثات میں خاتون سمیت 12افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہو گئے ،دھند کے باعث موٹروے کے مختلف سیکشن کو بھی بند کر دیا گیا اور شہریوں کو غیرضروری سفر سے گریز کرنے کی ہدایت کی گئی ، محکمہ موسمیات کے مطابق دھند اور سموگ کا سلسلہ آئندہ چند روز تک جاری رہے گا، بارش کا دور دور تک کوئی امکان نہیں۔تفصیلات کے مطابق لاہور سمیت پنجاب کے مختلف علاقوں میں گزشتہ روز بھی دھند اور اسموگ کا راج برقرار رہا ۔ موٹروے حکام کے مطابق موٹروے پر لاہور سے بھیرہ تک حدنگاہ 25سے 50میٹر رہی ۔دھند اور سموگ کے باعث موٹروے کے مختلف سیکشن کو بھی بند کیا گیا۔ موٹروے پولیس نے شہریوں کو غیرضروری سفر سے گریز کرنے کی ہدایت کی ہے۔ قصور، فیصل آباد، ننکانہ صاحب، ساہیوال، ملتان سمیت دیگر شہروں میں بھی دھند اور سموگ کی شدت کم نہ ہوسکی جس سے لوگوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ محکمہ صحت پنجاب نے اسموگ سے بچا ئوکی ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ شہری سفر کے دوران چشمہ اور ماسک استعمال کریں اور سفر کے دوران یا بعد میں آنکھوں کو اچھی طرح دھوئیں جبکہ اسموگ میں زیادہ ٹھنڈے مشروبات سےاجتناب کیا جائے۔دوسری جانب شہریوں کو روزانہ زیادہ سے زیادہ پانی پینے اور گھروں سے غیرضروری طورپر باہر نہ نکلنے کی بھی ہدایت کی گئی ہے۔دھند اور سموگ کے باعث ٹریفک کی روانی بھی شدید متاثر ہو رہی ہے ۔ گزشتہ روز شیخوپورہ میں بیگ پور کے قریب مسافر بس اور وین میں خوفناک تصادم کے نتیجے میں 5افراد موقع پر جاں بحق جبکہ 20افراد شدید زخمی ہوگئے۔زخمیوں کو ڈی ایچ کیو شیخوپورہ اور گوجرانوالا کے مقامی اسپتال منتقل کردیا گیا۔لیہ کی تحصیل چوبارہ میں چوک اعظم کے قریب آئل ٹینکر کی رکشہ کوٹکر کے باعث 2بھائیوں سمیت 3افراد جاں بحق ہوگئے،ورثا نے لاشیں سڑک پر رکھ کر احتجاج کیا۔گوجرانوالہ میں بھی شیخوپورہ روڑ پرمسافربس اورکار میں تصادم ہوا،جس کے نتیجے میں ایک شخص جاں بحق اور 12شدید زخمی ہوگئے۔ دوسری طرف پنجاب میں اسموگ کے باعث گیس کی فراہمی معطل ہونے سے بجلی پیداکرنے والے کئی پلانٹس بند ہوگئے جس کی وجہ سے 4ہزار 250میگاواٹ بجلی سسٹم میں کم ہوگئی ہے اور لوڈشیڈنگ میں اضافہ کا خدشہ ہے۔ترجمان پاورڈویژن کے مطابق پنجاب میں شدید دھند کے باعث کئی میگاواٹ کے پیداواری یونٹس بند ہوگئے ہیں ¾چار سو میگاواٹ کا جام شورو، سات سو میگاواٹ کا کیپکو پلانٹ ،9 سو 85 میگا واٹ کا حبکو، چونیاں، لبرٹی، حبکو نارووال اور اٹلس پاور پلانٹ اور ایک ہزار میگاواٹ کا مظفر گڑھ بجلی گھر بند ہوگیا ہے جبکہ ٹرپنگ کے باعث چشمہ نیوکلیئر پاور پلانٹ عارضی طور پر بند کردیا گیا ہے۔ترجمان کے مطابق پلانٹ وفاقی حکومت کی جانب سے بند کئے گئے ہیں جبکہ سوئی ناردرن گیس کمپنی نے بھی پاورپلانٹس کوگیس کی فراہمی بند کردی ہے جس کی وجہ سے 7پاور پلانٹس کو نومبرتک200ملین گیس کی فراہمی بند رہے گی۔اس کے ساتھ ساتھ فرنس آئل اورڈیزل پرچلنے والے پاورپلانٹس کوبھی بندکردیاگیا ¾ پاورپلانٹ بندش سے4ہزار 250میگاواٹ بجلی سسٹم میں کم ہوگئی اور بجلی کی پیداوار میں کمی کا سامنا ہے جس کے باعث لوڈشیڈنگ میں مزید اضافے کا امکان ہے۔

 

Leave a Reply

Your email address will not be published.