کراچی سرکلر ریلوے منصوبہ ‘وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے وزیر مینشن تامنگھوپیر تجاوزات ہٹانے کیلئے ٹاسک فورس قائم کردی

Chief Minister sindh

کراچی جدت ویب ڈیسک وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ کراچی سرکلر ریلوے منصوبہ بہت اہم ہے، چاہتے ہیں کہ منصوبے پر کام جلد شروع ہو۔ یہ بات انہوں نے جمعہ کو وزیراعلی ہاؤس میں منعقد کراچی سرکلر ریلوے سے متعلق اہم اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کی۔ اجلاس میں چینی کمپنی CRC کے نائب صدر جنگ جنجون، مارکیٹنگ ڈائریکٹر، پروجیکٹ ڈائریکٹر اور بزنس مینیجر سمیت سندھ حکومت کی جانب سے وزیر ٹرانسپورٹ ناصر شاہ، چیئرمین منصوبابندی و ترقی محمد وسیم، وزیراعلی سندھ کے پرنسپل سیکریٹری سہیل راجپوت، سیکریٹری ٹرانسپورٹ، سیکریٹری توانائی اور ڈی جی ماس ٹرانزٹ اطہر و دیگر اعلی حکام نے شرکت کی۔وزیراعلی سندھ نے کہا کہ کراچی سرکلر ریلوے منصوبہ بہت اہم ہے، چاہتے ہیں کہ منصوبے پر کام جلد شروع ہو۔منصوبہ حتمی منظوری کے لیے ECNEC کو بھیجا جارہا ہے۔ کراچی سرکلر ریلوے منصوبہ تقریبا 2 ارب روپئے کا منصوبہ ہے۔ منصوبے کا بین الاقوامی ٹینڈر اکتوبر میں جاری کیا جائے گا۔اجلاس میں بتایا گیا کہ وزیر مینشن سے منگھوپیر تک تجاوزات، صنعتی فضلہ اور بھینسوں کے باڑے وغیرہ موجود ہیں جو منصوبے میں رکاوٹ کا باعث ہیں۔ جس پر وزیراعلی سندھ نے متعلقہ حکام کو احکامات جاری کرتے ہوئے کہا کہ منصوبے کے راستے سے تجاوزات اور صنعتی فضلہ صاف کیا جائے۔ تجاوزات اور جھاڑیاں ہٹانے کے بعد ہی سروے مکمل ہوسکے گا۔وزیراعلی سندھ نے کمشنر کراچی، ڈی سی، ڈیم ایم سی اور ڈی جی کے ڈی اے پر مشتمل ٹاسک فورس قائم کرتے ہوئے کہا کہ ٹاسک فورس تجاوزات ہٹانے کے حوالے سے مکمل تحفظ دے گی۔ انہوں نے مزید بتایا کہ سندھ حکومت موبلائزیشن کوسٹ دینے کے لیے تیار ہے اگر ڈسمبر میں کام شروع کیا جائے۔ جس پر چینی کمپنی کے نائب صدر جنگ جنجون نے کہا کہ کام جلد شروع کرکے جے سی سی کو حتمی منظوری کے لیے بھیجیں گے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.