مغرب پر انحصار کا دور گزرگیا، ایرانی وزیر خارجہ

تہران جدت ویب ڈیسک ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے کہا ہے کہ سلامتی کونسل کی قراردادیں نہ تو سب کچھ ہیں اور نہ ہی انہیں محض کاغذ کا ایک ٹکڑا قرار دیا جاسکتا ہے۔ارنا نیوز کے مطابق تہران کے پیس میوزیم میں شمالی کوریا کے معاملے پر سلامتی کونسل کے اجلاس کی طرز پرمنعقدہ ایک تعلیمی ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ سلامتی کونسل کی قرار دادیں سب کچھ نہیں محض کاغذ کا ٹکڑا ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ دنیا میں فوجی طاقت ہی فیصلہ کن نہیں طاقت کے دوسرے ذرائع بھی موجود ہیں جن کے ذریعے قومی مفادات کا تحفظ کیا جاسکتا ہے۔وزیر خارجہ نے کہا کہ دنیا اور عالمی تعلقات میں مغرب پر انحصار کا دور بھی اب ختم ہوچکا ہے۔محمد جواد ظریف نے واضح کیا کہ جارج بش کے دور میں امریکا نے نئے عالمی نظام کا دعوی کیا تھا جس کے لیے بھاری مادی اور غیر مادی اخراجات بھی برداشت کیے گئے لیکن مشرقی ایشیا، شام، عراق اور افغانستان میں تشدد اور بدامنی کے سوا اس کا کوئی نتیجہ برآمد نہیں ہوا۔ایران کے اعلی سفارت کار نے واضح کیا کہ، دنیا میں طاقت کے دوسرے ذرائع بھی موجود ہیں جن سے بخوبی اور کامیابی کے ساتھ استفادہ کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایران اور خطے کے دوسرے ترقی پذیر ممالک اس نظریئے کو اپنا لیں تو مستقبل قریب میں عالمی معاملات میں اثرانداز ہونے کی توانائی پیدا کرسکتے ہیں۔ انہوں نے مذیدکہا کہ دنیا بھر میں حکومتوں اور ملکوں سے ہٹ کر بھی ایسے گروہ اور شخصیات موجود ہیں جو بین الاقوامی تبدیلیوں پر اثر انداز ہوتی ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.