دہشت گردنیٹ ورک توڑنے کےلئے سیکیورٹی ادارے سرگرم

ISPR

کراچی جدت ویب ڈیسک دہشت گردی کانیٹ ورک توڑنے کے لیے سیکیورٹی اداروں کی جدوجہد جاری ہے۔انصار الشریعہ کے دہشتگردوں کی شہر شہر تلاش جاری ہے۔کراچی،حیدرآباد،کوئٹہ، پشین اور ملتان سے 25افراد کوگرفتارکرلیاگیا ہے۔پروفیسرمشتاق نے انکشاف کیاہے کہ کراچی کی یونی ورسٹیوں کے لڑکوں کوتربیت دینے کا ٹاسک ملا تھا۔انصار الشریعہ کی فنڈنگ لائن بھی کاٹ دی گئی۔سیکیورٹی اداروں نے کمر کس لی کہ کراچی کے نوجوانوں کو اب اور دہشت گرد بننے نہیں دیں گے۔پورے شہر میں حساس اداروں نے مٹھی بھر دہشت گردوں کی تلاش شروع کردی۔پڑھے لکھے دہشت گردوں کو چن چن کر دبوچا جانے لگا۔کراچی، حیدرآباد، کوئٹہ،پشین اورملتان سے 25 گرفتاریاں کی گئیں۔سیکورٹی اداروں نےانصارالشریعہ کی فنڈنگ لائن کاٹ دی ہے۔کوئٹہ سے گرفتار پروفیسر مشتاق نے بھی اہم انکشافات کردیے۔پروفیسرمشتاق نے سروش اور عبداللہ ہاشمی کوحبیب اللہ سے ملایا۔پروفیسر مشتاق نے بتایا کہ جامعات کے لڑکوں کو تربیت دینے کا ٹاسک ملا تھا۔اس نے چار لڑکوں کی انصار الشریعہ کیلئے کامیاب برین واشنگ کا اعتراف بھی کیا۔پروفیسر مشتاق کا کہنا تھا کہ وہ کراچی کے بعد بلوچستان کی یونیورسٹی میں اپنا نیٹ ورک منظم کرنے کی کوشش کررہے تھے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.