ساحل کی خونی موجیں 55افراد کو نگل گئیں‘ہاکس بے کے تمام پوائنٹ بند

Karachi

کراچی جدت ویب ڈیسک شہر قائد میں تین ماہ کے دوران 55 افراد سمندر کی بے رحم لہروں کی نذر ہوگئے۔سندھ انتظامیہ نے بڑی تعداد میں ہلاکتوںکے بعد ہاکس بے کے تمام ساحلی تفریحی مقامات بند کردیئے ہیں۔تفصیلات کے مطابق ہاکس بے پر 12افراد اور گزشتہ3 ماہ کے دوران55افراد کے ڈوب کر جاں بحق ہونے کا معاملہ سنگین ہوگیا ہے۔ حادثہ کے بعد ہاکس بے کے تمام تفریح مقامات بند کردیئے گئے ہیں۔اتوارکو ہاکس بے آنے والے شہریوں کو ماڑی پور پولیس چوکی سے آگے جانے کی اجازت نہیں دی گئی، تفریح کیلئے آنے والے شہریوں کو ماڑی پور چوکی سے واپس موڑدیا گیا۔پولیس کے مطابق حفاظتی اقدامات کے پیش نظر ہاکس بے ساحل اور دیگر ساحلی پٹی پر دفعہ 144 کے تحت کارروائیاں کر رہے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق کراچی کے ساحلی علاقوں میں 3 ماہ کے دوران سمندر میں ڈوب کر جاں بحق ہونے والے افراد کی تعداد 55 ہوگئی ہے۔ ایدھی ویلفیئر کے مطابق ہاکس بے کے سمندر میں سب سے زیادہ 40 شہری ڈوبے، جب کہ منوڑا، حب ڈیم اور گڈانی میں 15 افراد سمندر کی لہروں کی نظر ہوگئے۔ایدھی کے لائف گارڈز نے امدادی کارروائیوں کے دوران 14 شہریوں کو ڈوبنے سے بچایا۔ یاد رہے کہ گزشتہ ماہ ہی ہاکس بے پر سعودی ڈپٹی قونصل جنرل کے بیٹے سمیت 3 افراد نہاتے ہوئے ڈوب کر ہلاک ہوگئے تھے، جب کہ 2014 میں کلفٹن کے ساحل پر عید کے روز 60 افراد ڈوب گئے تھے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.