//

ہسپتال کوویڈ مریضوں سے بھر گئے۔کراچی میںمکمل لاک ڈاؤن لگنے کا امکان

کراچی: : شہر قائد کراچی میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے مختلف فیصلوں پر غور کیا جا رہا ہے۔صورتحال کے پیش نظر مکمل لاک ڈاؤن لگنے کا امکان ہے۔
اس کے علاوہ عمومی نوعیت کے پیداواری صنعتی یونٹس، مارکیٹیں اور ٹرانسپورٹ سروس بھی بند کرنے کی تجویز زیر غور ہے۔ کورونا ایس اوپیز پر عملدرآمد کے لئے وفاقی قانون نافذ کرنے والے اداروں کی مدد لی جائے گی۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ کراچی میں کورونا کے پھیلاو کو روکنے کے لئے اہم اقدامات کی منظوری ٹاسک فورس دے گی۔ سندھ حکومت نے بڑے فیصلوں سے قبل سیاسی جماعتوں اور تاجر تنظیموں سے مشاورت مکمل کر لی ہے۔جمعے کے روز کورونا ٹاسک فورس اجلاس میں تمام پارلیمانی جماعتوں کو بھی مدعو کیا گیا ہے جبکہ تاجروں اور صنعتکاروں کے نمائندے بھی ٹاسک فورس اجلاس میں شریک ہونگے۔
اعلیٰ عسکری حکام اور سول انتظامیہ کے سینئر افسران بھی صورت حال سے آگاہ کرینگے۔ پی ٹی آئی، جی ڈی اے، ایم کیو ایم اور جماعت اسلامی کے پارلیمانی لیڈرز بھی اجلاس میں مدعو ہیں۔ مکمل لاک ڈاؤن یا سخت ترین پابندیوں سے متعلق حتمی فیصلہ ٹاسک فورس اجلاس میں ہوگا۔
کراچی میں کورونا کی تشویشناک صورتحال کے بعد شہر بھر کے ہسپتال کوویڈ مریضوں سے بھر گئے۔ مثبت کیسز کی شرح میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ ماہرین نے ویکسین لگانے اور ماسک پہننے کی ہدایات کی ہے۔
کراچی میں کورونا وبا نے ایسا زور پکڑا کے شہر بھر کے سرکاری و نجی ہسپتال کوویڈ مریضوں سے بھر گئے۔ کورونا متاثرہ مریضوں کی شرح میں بھی تشویش ناک حد تک اضافہ ہوگیا۔ سرکاری ہسپتالوں کے تمام وارڈز بھر چکے ہیں اور شعبہ جات کو کورونا وارڈز میں تبدیل کیا جا رہا ہے۔
سول ہسپتال کی جانب سے طبی عملے کی بڑی تعداد کورونا وائرس سے متاثر ہونے پر 6 شعبہ جات کی او پی ڈی اور الیکٹو سرجری کچھ عرصے منسوخ کر دی گئی ہیں۔ طبی ماہرین کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے ویکسین لگوانے اور ماسک پہننے کی ہدایات دے رہے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.