/

خصوصی عدالت نے نائن زیرو آپریشن کیس کا 6سال بعد فیصلہ سنادیا۔ایم کیو ایم کارکنان دھماکا خیز مواد کے الزامات سے بری

ویب ڈیسک ::کراچی کی انسداددہشت گردی کی خصوصی عدالت نے نائن زیرو آپریشن کیس کا 6سال بعد فیصلہ سناتے ہوئے ایم کیو ایم کارکنان کو دھماکا خیز مواد کے الزامات سے بری کر دیا۔
پراسیکیوشن ایم کیو ایم کارکنوں پر 52 مقدمات میں الزامات ثابت کرنے میں ناکام رہی۔ بری ہونے والوں میں فیصل موٹا، عبید کے ٹو، نادر شاہ، عامر سرپھٹا اور دیگر شامل ہیں۔
اسکے علاوہ غیر قانونی اسلحہ رکھنے کے جرم میں 14ملزمان کو سزا سنائی گئی جس میں فیصل موٹا، عبید کے ٹو، فرحان شبیر، نادر شاہ اور دیگر شامل ہیں۔
کیس میں مجموعی طور 26 ملزمان کو مقدمات میں نامزد کیا گیا تھا۔
عدالت نے غیر قانونی اسلحہ رکھنے کے جرم میں فیصل موٹا کو 10سال اور فرحان شبیر کو غیر قانونی اسلحہ رکھنے کے جرم میں 8سال قید کا حکم سنایا۔
انسداد دہشتگردی کی خصوصی عدالت نے 5اپریل 2021 کو کیس کا فیصلہ محفوظ کیا تھا۔
متحدہ قومی موومنٹ کے مرکز نائن زیرو عزیز آباد میں رینجرز نے 11 مارچ 2015ء کو چھاپہ مار کر عبید کے ٹو سمیت دیگر مبینہ ٹارگٹ کلرز کو گرفتار کیا، جو نائن زیرو کے اندر اور اطراف کے علاقوں میں موجود تھے، کارروائی میں بڑی تعداد میں اسلحہ بھی برآمد ہوا تھا

Leave a Reply

Your email address will not be published.