شمالی کوریا میں ایٹمی تجربے کے مقام پر کھودی جانے والی سرنگ بیٹھ جانے سے 200 مزدور ہلاک، تابکار مواد کے اخراج سے کسی بڑے حادثے کا خطرہ بڑھ گیا ہے

جدت ویب ڈیسک :پیانگ یانگ:بین الااقوامی خبر رساں ایجنسی کے مطابق افسوناک حادثہ اس وقت پیش آیا شمالی کوریا کے علاقے پیانگ یانگ میں 100 مزدور زیر تعمیر سرنگ پر کام کر رہے تھے کہ سرنگ کا آدھا حصہ اچانک گر گیا جس کے نتیجے میں 100 مزدور ملبے تلے دب گئے.جاپانی میڈیا نے دعوی کیا ہے کہ شمالی کوریا میں میڈیا پر پابندی کے باعث 10 اکتوبر 2017 کو پیش آنے والے حساس نوعیت کے اس معاملے کو دبا دیا گیا اور بیس سے زائد دن گذرنے کے باوجود کسی کو اس ہولناک حادثے کی کان و کان خبر نہیں ہونے دی گی.ذرائع کے مطابق ملبے تلے دبے مزدوروں کو نکالنے امدادی ٹیم کو روانہ کیا جو سرنگ بقیہ ماندہ حصے پر کھڑے ہوکر ریسکیو کا کام کر رہے تھے کہ اچانک وہ حصہ بھی گر گیا اور ریسکیو میں مصروف تمام اہلکار بھی ملبے تلے دب گئے.بین الااقوامی خبر رساں ایجنسی کے مطابق زیر تعمیر سرنگ کے ملبے تلے دبے مزدورں اور ریسکیو ادارے کے اہلکاروں کی تعداد 200 کے قریب ہے اور تمام افراد کے بچنے کی کوئی امید نہیں ہے.جاپانی میڈیا کے مطابق شمالی کوریا میں پیش آنے والا حادثہ دراصل ایٹمی تجربہ گاہ کے مقام ’پنگیری‘ میں رونما ہوا جہاں سرنگ تعمیر کی جا رہی تھی تاکہ ایٹمی دھماکوں کا تجربہ کیا جاسکے.

 

Leave a Reply

Your email address will not be published.