/

قائد اعظم کی بیٹی دینا واڈیا انتقال کر گئیں

کراچی جدت ویب ڈیسک :قائد اعظم کی بیٹی دینا وادیا  لندن میں انتقال  کر گئیں ، وہ بھارت میں رہائش پزیر تھیں انکی عمر 98 سال تھی اور وہ 15 اگست1919 میں پیدا ہوئیں قائد کو دینا کی والدہ رتی سے بے انتہا محبت تھی،جب رتی کا انتقال ہوا تو دینا ساڑھے 9برس کی تھیں۔رتی کی وفات کے بعد جناح ہندوستان کی سیاست سے دلبرداشتہ ہو کر لندن منتقل ہو گئے اور دینا کو اپنے پاس بلوا لیا تاہم وہ گھر سے دور بورڈنگ میں رہتی تھیں۔وہ سیاہ آنکھوں والی، خوبصورت اور دلکش لڑکی تھیں، اپنی والدہ کی طرح ہنس مکھ اور زندہ دل بھی تھیں، اکلوتی ہونے ہی کی وجہ سے وہ قائد اعظم کی بے حد لاڈلی تھیں، بہت کم لوگ اس حقیقت سے آگاہ ہیں کہ قائد اعظم دینا سے بہت پیار کرتے تھے۔ دینا کہتی ہیں کہ نومبر 1933 ء میں میرے والد نے ایچ سی آرمسٹرانگ کی مشہور کتاب کمال اتاترک پڑھی اور مجھے کہا کہ اس کو پڑھو اور اس کی بہت تعریف کی، قائد اعظم نے اس کتاب کا ان سے اتنا تذکرہ کیا کہ انہوں نے پیار سے انہیں ’گرے ولف‘ کہنا شروع کر دیا۔دینا کو اپنی والدہ کی طرح سیرو تفریح اور تقریبات میں شریک ہونے کا بہت شوق تھا، قائد اعظم اپنی زندگی میں اصراف کے سخت مخالف تھے لیکن اپنی لاڈلی بیٹی کو انہوں نے کبھی روک ٹوک نہیں کی، وہ ان کے تھیٹر، سینما، قیمتی لباس اور دیگر تمام اخراجات خوشی خوشی برداشت کرتے، اس سے ان کی دینا سے بے انتہا محبت کا اندازا لگایا جا سکتا ہے۔سن 1934 ءمیں حضرت علامہ اقبال کے بلاوے پر جناح واپس ہندوستان آ گئے اور بے انتہا مصروف ہو گئے، 1936ء میں انہوں نے دینا کو لندن سے بلوا لیا اور  اپنی سیاسی مصروفیات کی وجہ سے انہیں دینا کو ننھیال میں چھوڑنے کا فیصلہ کرنا پڑا جو بے حد نقصان دہ ثابت ہوا، باپ سے دوری اور والدہ کے انتقال کی وجہ سے دینا آہستہ آہستہ پارسی ماحول میں رنگتی اور اپنے والد کے اصولوں سے ہٹتی چلی گئیں۔قائد اعظم کو جب پتہ چلا تو بہت دیر ہو چکی تھی، دینا نے ایک پارسی نژاد عیسائی شخص نیول واڈیا سے شادی کا فیصلہ کر لیا اور اس پر عمل بھی کر ڈالا، قائد اعظم نے مولانا شوکت علی کو کہا کہ وہ دینا کو سمجھائیں لیکن دینا نے ایک نہ سنی اور قائد اعظم سے کہا کہ ہندوستان میں لاکھوں مسلمان لڑکیاں تھیں، آپ نے بھی تو ان سے شادی نہ کی

Leave a Reply

Your email address will not be published.