پریسٹن یونیورسٹی پر پابندی عائد

universities in pakistan

اسلام آباد جدت ویب ڈیسک ہائر ایجوکیشن کمیشن نے مقررہ معیار پر پورا نہ اترنے پر پریسٹن یونیورسٹی میں نئے داخلوں پر پابندی عائد کردی ہے، پابندی کا اطلاق کوہاٹ ،اسلام آباد ،پشاور ،لاہور ،کراچی سی سی ایم ٹی ملیر، کراچی کیمپس ،نارتھ ناظم آباداور کراچی مین کیمپس پر بھی ہوگا۔ایچ ای سی نے مزید کہا کہ جب تک کہ ریگولیٹری اتھارٹی کی طرف سے مقرر کردہ پالیسیوں کے مطابق کام نہیں کرتے تب تک پریسٹن یونیورسٹی کو نئے طلبا کو تسلیم کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی ۔ہائر ایجوکیشن کمیشن کا کہنا ہے کہ اگر یونیورسٹی ہدایات کے مطابق عمل میں ناکام ہو ئی توقواعدکے مطابق کارروائی شروع کی جائے گی۔واضح رہے کہ ایچ ای سی نے پریسٹن کو اپنے دو پروگراموں میں داخلے کو بند کرنے کا حکم دیا تھا، جس میں بیچلر آف سائنس âبی ایسáاور ماسٹرز آف ماسٹرز âایم ایسáشامل تھے ۔ موجود ہ صورتحال کے باعث طلبہ میں شدید بے چینی پائی جاتی ہے، طالب علموں کا کہنا ہے کہ یونیورسٹی میں کھیلوں، جم، تحقیقی مراکز اور کلاس رومز میںسہولیات موجود نہیں ہیں۔دوسری طرف کچھ طالب علموں نے یونیورسٹی کے مالی امداد پروگرام کی تعریف کی اور کہا کہ یونیورسٹی نے غریب خاندانوں سے تعلق رکھنے والے بہت سے طالب علموں کے مستقبل کو محفوظ بنانے میں حصہ لیا ہے ،انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کے شعبے کے ڈائریکٹر ریاض نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ایچ ای سی کے فیصلے معقول ہیں لیکن تعلیمی اداروں کے دروازے طالب علموں کو، خاص طور پر غریب خاندانوں کے لئے بند نہیں ہونے چاہئیں، انہوں نے مزید بتایا کہ ،ہم پی ایچ ڈی ہولڈرز اور بیچلرزکے علاوہ گولڈ میڈلسٹ اسٹاف فراہم کررہے ہیں۔ہائر ایجوکیشن کمیشن کی ڈائریکٹر جنرل میڈیا عائشہ اکرام کا کہنا ہے کہ ایچ ای سی باقاعدہ طور پر تسلیم شدہ اداروں کی فہرست کیساتھ ساتھ منظوری کے پروگراموںکے حوالے سے والدین اور طالب علم کیلئے اخبارات اورسوشل میڈیا کے ذریعے ایچ ای سی کی ویب سائٹ سے چیک کرنے کےلئے ہدایات جاری کرتا رہتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ طالب علموں کومسلسل خبردار کیا ہے کہ ایچ ای سی ایسی یونیورسٹیوں یا اداروں سے حاصل کردہ ڈگری یا سرٹیفکیٹ کو قبول نہیں کرے گاجو معیار پر پورا نہیں اتریں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.