/

اسلام آباد ہائیکورٹ کا عارف عثمانی کی تقرری کے خلاف تحریری حکم نامہ جاری

اسلام آباد(بیورو رپورٹ)اسلام آباد ہائیکورٹ  نے عارف عثمانی کی تقرری کے خلاف تحریری حکم نامہ جاری کر دیا۔ہائیکورٹ نے تمام فریقین وفاق، فنانس منسٹر اسد عمر، سیکریٹری وزارت خزانہ،گورنر اسٹیٹ بینک، چیئرمین ایس ای سی پی، صدر نیشنل بینک عارف عثمانی، چیئرمین نیب ، ڈی جی ایف آئی اے، سیکریٹری داخلہ، ڈائریکٹر دفتر خارجہ کو نوٹسز جاری کر کے جواب طلب کرلیا ہے۔ہائیکورٹ نے حکم دیا ہے کہ آئندہ سماعت سے پہلے تمام فریقین جواب جمع کرائیں، ۔جسٹس محسن اختر کیانی نے حکم نامہ جاری کیا۔عدالتی حکمنامہ2صفحات پر مشتمل ہے۔ صدر نیشنل بینک عارف عثمانی اور بورڈ کے ڈائریکٹرز کو جاری  نوٹس  صدر نیشنل بینک عارف عثمانی کے وکیل نے وصول کئے۔نوٹس میں حکم دیا گیا ہے کہ اہم مسئلے پر تمام فریقین جواب دیں،رجسٹرار آفس فریقین کو خصوصی میسجز کے ذریعے نوٹسز ارسال کرے، عدالت نے عارف عثمانی کی تقرری سے متعلق ریکارڈ کے لئے بھی نوٹس جاری کر دیا۔اس کے ساتھ ساتھ عدالت نے عارف عثمانی کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کے حوالے سے بھی وزارت داخلہ کو نوٹس جاری کیا ہے۔ تمام فریقین آئندہ سماعت سے پہلے درخواست گزار کے وکیل ڈاکٹر جی ایم چوہدری کو جواب کی کاپی فراہم کریں، کیس پر مزید سماعت 17فروری2021 کو کی جائے گی۔واضح رہے کہ نیشنل بینک کے صدر عارف عثمانی کی تقرری اور تعلیمی اہلیت نیشنل بینک کے قوانین کے مطابق نہیں ہے۔عارف عثمانی پر بیرون ملک منی لانڈرنگ کے حوالے سے بھی شدید تحفظات پائے جاتے ہیں۔اس حوالے سے سنسنی خیز انکشافات متوقع ہیں۔

W.P 3725-20