پاکستان پر دبائو سے سکیورٹی صورتحال خراب ہوگی،روس کا امریکہ کو انتباہ

ماسکوجدت ویب ڈیسک چین کے بعد روس نے بھی امریکہ کو خبردار کیا ہے کہ پاکستان خطے کا اہم کھلاڑی ہے جس پر دبائو سے خطے کی سکیورٹی صورتحال مزید خراب اور افغان امن عمل کو نقصان پہنچ گا، واشنگٹن پاکستان کے ساتھ ہرصورت مذاکرات کا راستہ اپنائے۔روسی اخبار افغانستان ڈیلی کو انٹرویو دیتے ہوئے روسی صدر ولادی میر پیوٹن کے خصوصی سفیر برائے افغانستان ضمیر کابلوف نے کہا کہ پاکستان خطے کا ایک اہم ترین کھلاڑی ہے جس کے ساتھ ہمیں ہر صورت مذاکرات کا ہی راستہ اپنانا پڑے گا،اگر پاکستان پر زیادہ دبا ڈالا گیا تو یہ نہ صرف افغان امن عمل کیلئے نقصان دہ ہوگا بلکہ اس سے خطے کی سیکیورٹی صورتحال بھی خراب ہو جائے گی۔انہوں نے امریکہ کو آڑے ہاتھوں لیا اور کہا افغانستان میں غیر ملکی فوجوں کی موجودگی کی وجہ سے عالمی سطح پر دہشتگردی پروان چڑھ رہی ہے، روس سمجھتا ہے کہ دہشتگردوں کا ڈھانچہ در حقیقت امریکی مفادات کا تحفظ کر رہا ہے۔صدر ٹرمپ کے طالبان کو مذاکرات میں شامل کیے جانے کا عندیہ دینے پر ان کا کہنا تھا ہو سکتا ہے کہ یہ پالیسی اس لیے اپنائی جا رہی ہو کیونکہ امریکہ میدان جنگ میں طالبان کو شکست نہیں دے سکتا، اس لیے وہ مذاکرات کی طرف جانا چاہ رہے ہیں۔انہوں نے ڈونلڈ ٹرمپ کے اس بیان کو خوش آئند قرار دیا جس میں انہوں نے آئندہ کسی ملک میں جمہوریت کو فروغ دینے کی نیت سے لشکر کشی نہ کرنے کے عزم کا اظہار کیا تھا۔ تمام تر خدشات کے باجود مجھے یقین ہے کہ ایسا ہی ہوگا۔واضح رہے کہ اس سے قبل چین بھی نئی افغان پالیسی پر کھل کر پاکستان کی حمایت کر چکا ہے ۔ چین کی جانب سے کہا گیا تھا کہ پاکستان نے دہشتگردی کے خلاف بے شمار قربانیاں دی ہیں جس کی عالمی برادری کو قدر کرنی چاہیے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.