قاضی خالدکی برطانوی جامعات سے معاہدے کی سمری منظور کرنیکی درخواست

Shaheed Zulfiqar Ali Bhutto University of Law

کراچی جدت ویب ڈیسک شہیدذوالفقار علی بھٹو لائ یونیورسٹی کے وائس چانسلر زاور سندھ انٹریونیورسٹی کنسورشیم کے چیئرمین جسٹس رقاضی خالد علی نے وزیراعظم شاہدخاقان عباسی ، وفاقی وزیرتعلیم انجینئربلیغ الرحمن، گورنرسندھ محمدزبیراور چیئرمین ہائرایجوکیشن کمیشن ڈاکٹرمختاراحمد سے اپیل کی ہے کہ وہ برطانوی جامعات سے معاہدوں کی دستاویزات پر دستخط کرنے کی اجازت دینے کی سمری کو وفاقی کابینہ سے جلد از جلد منظور کرانے میں اپنا مثبت کردار ادا کریں تاکہ ستمبر 2017 کے تعلیمی سیشن کے آغاز سے ان معاہدوں کی روشنی میں طلبہ وطالبات کو اسکالرشپ اور دوسری سہولتیں حاصل ہوسکیں۔ قاضی خالد نے کہاکہ گزشتہ 3 سال کی کوششوں کے بعد 3 برطانوی جامعات نے نہ صرف ہمارے کورس اور نصاب کو تسلیم کیا بلکہ یہ پیشکش بھی کی 3 سالہ پروگرام میں 2 سال ہماری جامعہ میں تعلیم حاصل کرنے کے بعد جو طلبہ وطالبات برطانوی جامعات میں فائنل ایئر کی تعلیم حاصل کریں گے ان کو صرف 2300 پاؤنڈز سالانہ فیس کی ادائیگی پر داخلہ دیا جائے گا اسی طرح ایل ایل ایم سے ایک سال کی فیس صرف 1300 پاؤنڈز ہوگی۔ معاہدے کے تحت ہماری جامعہ میں داخل ہونے والے ہر طالب علم کا انرولمنٹ برطانوی جامعات سے بھی ہوگا اور صرف 200 پاؤنڈزانٹرولمنٹ فیس ادا کرنا ہوگی۔ اس کے نتیجہ میں سندھ کے غریب اور متوسط طبقہ کے طلبہ وطالبات بھی برطانوی جامعات سے فارغ والتحصیل ہوسکتے ہیں۔ قاضی خالد نے کہاکہ وزارت خارجہ اور حکومت سندھ نے معاہدوں کی منظوری دے دی ہے جبکہ ایچ ای سی، وفاقی وزارت تعلیم، قانون اور کابینہ کی منظوری کے بعد ان معاہدوں پر دستخط کرنے کے لیے وفد لندن جائے گا جس کی قیادت کے لیے گورنرسندھ نے رضامندی ظاہر کی ہے جبکہ کنسورشیم کی 10 رکن وائس چانسلر بھی لندن جانے کے لیے تیار ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.