پولیس پیداگیری میں مصروف‘کراچی میں اسٹریٹ کرائمز کے نئے ریکارڈ قائم

کراچی جدت ویب ڈیسک کراچی میں اسٹریٹ کرائم کم نہ ہوسکے۔ ہر گھنٹے میں ایک گاڑی اور ہر گھنٹے میں موٹر سائیکلیں چوری یا چھینی جارہی ہیں جبکہ رواں برس 7ماہ کے دوران ساڑھے 14 ہزار سے زائد موبائل فون چھیننے جاچکے ہیں۔ ایک رپورٹ کے مطابق کراچی آپریشن کی بدولت سنگین جرائم کی شرح میں خاطر خواہ حد تک کم ہوچکی مگر اسٹریٹ کرمنلز کیخلاف کوئی حکمت عملی کار گر ثابت نہیں ہورہی ۔ سگنلز ہوں بازار ہوں یا کوئی اور مقام شہریوں کو بے دھڑک لوٹا جارہا ہے۔ سی پی ایل سی ریکارڈکے مطابق اس سال اب تک 739 شہری اپنی گاریوں سے محروم ہوئے جبکہ یہ تعداد گزشتہ سال کے سات ماہ میں891 تھی۔12ہزار4سو6شہری اپنی موٹر سائیکلوں سے محروم ہوئے جبکہ سال2016 کے سات ماہ میں یہ تعداد 11ہزار6سو71 تھی۔14 ہزار 5 سو 42موبائل فونز بھی چھیننے یا چوری کئے جاچکے ہیں۔ گزشتہ سال کے سات ماہ میں یہ تعداد 17ہزار2سو11 تھی۔ شہر میں ہر چار گھنٹے میں ایک شہری گاڑی اور ہر گھنٹے میں دو شہری اپنی موٹر سائیکلوں سے محروم کئے جارہے ہیں۔ جبکہ ہر گھنٹے تین موبائل فونز چھیننے جارہے ہیں۔ پولیس کے مطابق اسٹریٹ کرمنلز شہریوں کو ٹریفک جام میں زیادہ نشانہ بناتے ہیں۔ ڈاکٹر جمیل احمد ڈی آئی جی سی آئی اے کے مطابق اسٹریٹ کرائم کی سب سے زیادہ وارداتیں شارع فیصل اور گلستان جوہر میں ریکارڈ کی گئیں۔ دوسرا نمبر گلشن اقبال اور بہادر آباد کے علاقوں کا ہے۔ پولیس نے اسٹریٹ کرائم کے حساب سے شہر کے ہاٹ اسپاٹس کا تعین بھی کرلیا لیکن شہریوں کا مال اور جان سے محروم کرنیوالا یہ جرم کم ہونے کا نام نہیں لے رہا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.