The new type of corona, Lambada, is potentially more dangerous
The new type of corona, Lambada, is potentially more dangerous

کورونا کی نئی قسم لمباڈا ممکنہ طور پر زیادہ خطرناک

/

واشنگٹن جدت ویب ڈیسک:کورونا وائرس کی متعدد نئی اقسام اب تک سامنے آچکی ہیں جن میں سے ڈیلٹا کو سب سے متعدی سمجھا جارہا ہے۔

کورونا وائرس کی ان اقسام میں متعدد میوٹیشنز ہوئی ہیں جس کی وجہ سے وہ زیادہ قابل تشویش بن چکی ہیں جیسے ایلفا، بیٹا اور ڈیلٹا وغیرہ۔کچھ اقسام پر ابھی تحقیقی کام جاری ہے جن میں لمباڈا قابل ذکر ہے اور اب نئی تحقیق میں خیال ظاہر کیا گیا ہے کہ کورونا کی یہ قسم سب سے خطرناک ہوسکتی ہے۔

کورونا وائرس کی قسم لمباڈا سب سے پہلے جنوبی امریکا کے ممالک چلی، پیرو، ارجنٹائن اور ایکواڈور میں پھیلنا شروع ہوئی تھی اور اب تک 26 ممالک تک پہنچ چکی ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق پری پرنٹ سرور میں شائع تحقیق میں متعدد مالیکیولر پولی جینیٹک کو استعمال کرکے لمباڈا قسم کی جانچ پڑتال کی گئی۔

اس تحقیق میں شامل ماہرین نے بتایا کہ لمباڈا کے اسپائیک پروٹین پر ہونے والی میوٹیشن RSYLTPGD246- 253N اس کو زیادہ متعدی ہونے سے منسلک ہے۔اس میوٹیشن کے باعث لمباڈا جنوبی امریکا کے ممالک میں بہت تیزی سے پھیلی۔تحقیق میں اس قسم کی 2 اہم ترین وائرلوجیکل فیچرز کے بارے میں بتایا گیا کہ جو مدافعتی نظام کے ردعمل میں مزاحمت کا باعث بنتی ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Previous Story

مشہور ڈچ یوٹیوبر ویڈیو بناتے ہوئے گر کرہلاک

Next Story

نائیجر میں فوجیوں پر خونی حملہ، 15اہلکا رہلاک،چھ لاپتہ

Latest from تازہ ترین